یقین سچے دلوں کا سودا


سچ تو یہ ہے, کہ یقین سچے دلوں کا سودا ہے. 
جو یقین کرنے والے ہوتے ہیں, انکو بس پیغام ملنے کی دیر ہوتی ہے.
جو یقین نہیں کرتے, وہ معجزوں کے طلبگار ہوتے ہیں.
 اور معجزے طلب کرنے والے کم ہی یقین کرتے ہیں.
شق القمرنہ ابوبکر و عمر نہ عثمان و علی کی طلب تھی. اسکے طالب ابولہب و ہمنوا تھے.
 جنہوں نے یقین نہیں کرنا تھا, جن کی قسمت میں یقین نہ تھا وہ چاند کو ٹکڑے کروا کر بھی یقین نہ پاسکے.

تو اے دعوت کے داعی تم تو بس پیغام پہنچانے پر ہی سزاوار ہو. نہ کہ منوانے پر.

تبصرے

زیادہ دیکھی گئی تحاریر

استقبالِ رمضان -17

ماہ رمضان نیکیوں کی بہار – مقتبس خطبہ جمعہ مسجد نبوی

خوش ترین زندگى، زندگى با قناعت است

استقبالِ رمضان-16

زمرہ جات

اور دکھائیں

سبسکرائب بذریعہ ای میل