جمعرات, فروری 28, 2013

Mithas Se Bharpoor Zindagi




مٹھاس سے بھرپور زندگی

فرض کریں آپ کے سامنے چائے کا ایک کپ رکھا ہوا ہے۔
اس میں شکر تو ڈال دی گئی ہے مگر ہلائی نہیں گئی۔
کیا چائے پیتے ہوئے آپ شکر کی مٹھاس محسوس کر پائیں گے؟
نہیں، ہرگز نہیں۔۔۔
اب ایسا کیجیئے کہ چائے کے کپ کو انتہائی غور سے دیکھنا شروع کر دیجیئے۔
دو منٹ کے بعد چائے کو دوبارہ چکھیئے۔
کیا ذائقہ میں کوئی تبدیلی نظر آئی؟
کیا کچھ مٹھاس کا احساس ہوا؟
شاید نہیں!!!
بلکہ اب تو چائے ٹھنڈی بھی ہونا شروع ہو چکی ہوگی۔
ابھی تک تو چائے کے میٹھا ہونے والی کوئی بات نظر نہیں آرہی۔
اب ایک آخری کوشش اس طرح کیجیئے کہ:
اپنے دونوں ہاتھ سر پر رکھ کر چائے کے کپ کے ارد گرد چکر لگائیے۔۔
اور ساتھ ساتھ اللہ سے دُعا بھی کرتے رہیئے کہ آپ کی چائے میٹھی ہوجائے۔
ارے یہ تو اچھا خاصا مذاق لگ رہا ہے۔۔۔
بلکہ شاید پاگل پن۔۔۔
اس طرح اور تو کچھ نہیں ہوا۔۔۔
بلکہ چائے بالکل ٹھنڈی ہو چکی ہے۔۔۔
میٹھا تو کیا ہونا تھا اس نے، پینے کے قابل بھی نہیں رہی اب۔۔۔

جی ہاں!! اور بالکل اسی طرح ہی ہماری زندگی ہے۔۔۔
چائے کے ایک کڑوی کسیلے کپ کی طرح۔۔۔
اور ہمیں اللہ کی طرف سے عطا کردہ صلاحیتیں شکر کی مانند ہیں۔۔۔
اور اِن صلاحیتوں نے آپکی زندگی میں مٹھاس بھرنے کیلئے اپنے آپ تو نہیں جاگ جانا۔۔۔
لاکھ ہاتھ اُٹھا کر دعائیں کر لیجیئے۔۔۔
حرکت تو دینا پڑے گی ان صلاحیتوں کو۔۔۔
اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار تو لانا ہی پڑے گا آپکو۔۔۔
لگن، محنت، جذبے اور خلوص کے ساتھ۔۔۔
تاکہ زندگی چائے کے ایک میٹھے اور پُر لطف کپ کی مانند ہو جائے۔۔۔

Sanson ki agahi


میرے وجود میں سانسوں کی آگاہی کے لئے
تمہارا مجھ میں دھڑکنا بہت ضروری ہے !



~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Mere wujood main saanson ki aagahi ke liye
Tumhara mujh main dharakna buhat zaroori hai 

Ishara



بہت نزدیک ہو کر بھی وہ اتنا دور ہوتا ہے
اشارہ ہو نہیں سکتا، پکارا جا نہیں سکتا
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
 
Bohat Nazdeek Ho Ker Bhi Woh Itna Dur Hota Hai
Ishara Ho Nahi Sakta Pukara Ja Nahi Sakta

Khoj



تمہاری کھوج میں اپنا کمال کھو بیٹھے
جواب ڈھونڈ کے لائے، سوال کھو بیٹھے

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Tumhaari khoj mein Apna Kamaal kho bethe
Jawaab dhoond k Laaye, Sawaal kho bethe

Junoon-e- Be Maani


اک جنونِ بے معنی، اک یقینِ لاحاصل!
اور کیا ملا ہم کو تیری آرزو کرکے

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Ik Junoon-E-Be-Maani, Ik Yaqeen-E-La-Haasil....... !Aur Kya Mila Hum ko Teri Aarzoo Kar Ke...

بدھ, فروری 27, 2013

Mohabbat Is Tarah


محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے پھول پہ تتلی اترتی ہے
ہوا میں ڈولتی، پر تولتی تتلی
لرزتی،  کپکپاتی، پنکھڑیوں کو پیار کرتی ہے
تو ہر پتۤی نکھرتی ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے چار سُو خوشبو بکھرتی ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے خواب آتا ہے
جو آتا ہے تو دروازے پہ دستک تک نہیں ہوتی
بہت سرشار لمحے کی، مدُھر چُپ میں
کسی ہلکورے لیتی آنکھ کی خاطر
کسی بے تاب سے ملنے، کوئی بے تاب آتا ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے جھیل میں مہتاب آتا ہے

 (سعود عثمانی)

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise phool pe titli utarti hai
Hawa main dotli, par tolti titli
Larazti, kapkapati, pankhriyon ko piyar karti hai
To har patti nikharti hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise chaar soo khushboo bikharti hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise khwab ata hai
Jo aata hai to darwazey pe dastak tak nahi hoti
Bohar sarshar lamhey ki, madhur chup main
Kisi hilkorey leti aankh ki khatir
Kisi be-taab se milney, koi be-taab ata hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise jheel main mehtaab ata hai

(Saud Usmani)

Zaat



Mohabbat Zaat Ke Ander Koi Guum Zaat Hoti Hai.....
Mohabbat Ke Ta’qub Mein Hamesha Ghaat Hoti Hai.....

Mohabbat Mein Khushi Se Mout Ko Ham Orh Laitay Hain
Zara Socho Ke Is Mein Aisi Koi Baat Hoti Hai…

Mohabbat Shehaid Mei Lipta Howa Ik Zeher Hai Laikin
Mohabbt Jeet Hoti Hai, Mohabbat Maat Hoti Hai…

Mohabbat Khud Zamana Ho Ke Bhee Hai MosmoN Jaisi
Kubhi Ye Subaah Hoti Hai, Kubhi Ye Raat Hoti Hai…

Mohabbat Aisi Khushbu Hai Kubhi Yukjaa Nahee Rehti
Ksi Se Door Hoti Hai,Ksi Ke Paas Hoti Hai......

Mohabbat Jis Ko Haasil Ho Muqaddar Ka Sikander Wo
Mohabbat Rab Ki Jaanib Se HaseeN Sogaat Hoti Hai…

سوموار, فروری 25, 2013

Kisi shaam aye mere be khabar



جو اُتر گیا ۔ تیرے دھیان سے ۔ کسی خواب سا ۔ ۔ ۔
سرِ دشتِ غم ۔ ۔
کسی بنتے مٹتے سراب سا ۔ ۔ ۔
کسی اُجڑے گھر میں دھری ہوئی ۔ ۔ ۔
کسی بے پڑھی سی کتاب سا ۔ ۔
میں ہوں گم اُسی کی مثال ۔ گردِ سوال میں ۔ ۔ ۔
کسی زیرِ لب سے جواب سا ۔ ۔ ۔
مجھے دیکھ ۔
مجھ پہ نگاہ کر ۔ ۔
کہ میں جی اُٹھوں تیرے دھیان میں ۔ ۔
مجھے راستوں کی خبر ملے اِسی دشت ریگِ روان میں ۔ ۔
تُو پڑھے جو مجھ کو ورق ورق ۔ ۔ ۔
مرا حرف حرف چمک اُٹھے ۔ ۔ ۔
تو دمک اُٹھے وہ حدیثِ دل جو نہاں ہے عرضِ بیان میں ۔ ۔
کسی شام اے میرے بے خبر ۔ ۔
وہی رنگ دے میری آنکھ کو ۔ ۔ وہی بات کہہ میری کان میں ۔ ۔ ۔

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
Jo utar gaya, tere dhiyan se, kisi khwab sa
Sar-e-dasht-e-gham
Kisi bantey mit'tey saraab sa
 Kisi ujrey ghar main dhari hui
Kisi be-parhi si kitaab sa
Main hoon gum usi misaal, gard-e-sawal main
Kisi zer-e-lab se jawab sa
Mujhey dekh
Mujh pe nigaah kar
Ke main jee uthoon tere dhiyaan main
Mujhey raaston ki Khabar miley, isi dasht-e-raig-e-rawaan main
Tu parhey jo mujh ko waraq waraq
Mera harf harf chamak uthey
To damak uthey woh hadees-e-dil, jo nihaan hai arz-e-bayaan main
Kisi shaam aey mere be khabar
Wohi rang de meri aankh ko.. Wohi baat keh merey kaan main

Mohabbat Dukh To Deti Hai


محبت دکھ تو دیتی ہے
مگر اک بات کہنی ہے
کہ جس کو چاہا جاتا ھے
ضروری یہ نہیں ہوتا کہ
اس کو پا لیا جائے

کبھی اس کے بچھڑنے سے
محبت کم نہیں ہوتی

ذرا سی دیر پہلے تو
یہی احساس ہوتا ہے، کہ
کوئی جی نہیں سکتا
مگر پھر رفتہ رفتہ ہی
حقیقت کھُلتی جاتی ہے

محبت وہ نہیں ہوتی
کہ جس کو پا لیا جائے

محبت وہ بھی ہوتی ہے
جو ہمیشہ ساتھ رہتی ہے
کبھی دکھ کے اندھیروں میں
کبھی خوشیوں کے دامن میں

کبھی وہ آس دیتی ہے
کبھی امید دیتی ہے

Mohhabat Dukh To Deti Hai,,
Magar Ik Baat Kehni Hai,,
Ke Jisko Chaha Jata Hai,,
Zarori Ye Nahi Hota Ke,,
Usko Pa Liya Jaey,,

Kabhi Us Ke Bicharne Se,,
Mohabbat Kam Nahi Hoti,,

Zara Si Dair Pahle To,,
Yehi Ehsaas Hota Hay,,Ke
Koi Ji Nahi Sakta,,
Maggar Phir Rafta Rafta Hi,,
Haqiqat Khulti Jati Hai,,

Mohabbat Wo Nahi Hoti,,
K Jisko Pa Liya Jaey,,

Mohabbat Wo Bhi Hoti Hay,,
Jo Hamesha Sath Rahti Hay,,
Kabhi Dukh Ke Andheron Main,,
Kabhi Khushion Ke Daman Main,,

Kabhi Woh Aas Deti Hai
Kabhi Umeed Deti Hai.

جمعہ, فروری 22, 2013

Zindagi



تُو جو گزرے گی تو پھرکچھ نہ بچے گا باقی
زندگی......! سوچ تُجھے کیسے گزارا جائے ؟

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Tu Jo Guzre Gi To Phir Kuch Na Bachey Ga Baqi
Zindagi!! Soch Tujhey Kaise Guzara Jaye? 

Hadd



کچھ بھی کیا ہو ہم نے، کہیں بھی گئے ہوں ہم
حد سے تمہاری یاد کی باہر گئے ہیں کیا؟

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Kuch Bhi Kiya Ho Ham Ne, Kahin Bhi Gaye Hon Ham
Had Se Tumhari Yaad Ki Bahar Gaye Hain Kiya?

Dastaras



دل نے اس آس میں لٹایا سب
دسترس میں رہا کرے کوئی 
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Dil Ne Is Aass Main Lutaaya Sab
Dastaras Main Raha Kare Koi

Manzil Tumhari Hai



اگر تم دل گرفتہ ہو
کہ تم کو ہار جانا ہے
تو پھر تم ہار جاؤ گے
اگر خاطر شکستہ ہو
کہ تم کچھ کر نہیں سکتے
یقیناً کر نہ پاؤ گے

یقیں سے عاری ہو کر
منزلوں کی سمت چلنے سے
کبھی منزل نہیں ملتی
کبھی کنکر کے جتنے حوصلے والوں
سے بھاری سل نہیں ہلتی

زمانے میں ہمیشہ کامیابی
اُن کے حصے میں ہی آتی ہے
جو اول دن سے اپنے ساتھ
اک عزمِ مصمّم لے کے چلتے ہیں
کہ جن کے دل میں عزم و حوصلہ اک ساتھ پلتے ہیں

اگر تم چاہتے ہو کامیاب و کامراں ہونا
تو بس رختِ سفر میں
تم یقین و عزم کی مشعل جلا رکھنا
سفر دشوار تر ہو
تب بھی ہمت، حوصلہ رکھنا

سفر آغاز جب کرنا
تو بس اتنا سمجھ لینا
جہاں میں کامیابی کی یقیں والوں سے یاری ہے
اگر تم بھی یقیں رکھو
تو پھر منزل تمھاری ہے۔

محمد احمدؔ

جمعرات, فروری 21, 2013

Meri Miti Main





ستارے چشم میں, سینے میں اک ماہتاب کو رکھ کر
زمیں پر وہ مجھے یوں ہمسرِ افلاک کرتا ہے

مجھے وہ محو کردیتا ہے بس اپنی تمنا میں
بہت سرشار کرتا ہے، بہت بے باک کرتا ہے

تمنائوں کی مٹی گوندھ کر کوزے بناتا ہوں
میرے اندر رواں وہ ذندگی کا چاک کرتا ہے

کبھی بیزار کرتا ہے مجھے دنیا کی خواہش سے
کبھی دنیا خواہش میں مجھے غمناک کرتا ہے

مری مٹی میں اک پتھر گڑا ہے حجرِ اسود کا
خطائیں جذب کرلیتا ہے، مجھ کو پاک کرتا ہے

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Sitaa'ray chashm mein, seene mein ek Mah'taab ko rakh ker
ZameeN per Wo Mujhe Youn hum sar-e-Aflaak kerta hai

Mujhe Wo Mehvv rakhta hai bus Apnii Tammana mein
Buhat Sarshaar kerta hai , buht Bay'baak kerta hy

Tammanaoo ki Mittii goondh ker koozay banata hoon
Mere ander rawaan Woh zindagii ka Chaak kerta hy

Kabhii bay'zaar kerta hy mujhe dunya ki khwaish sey
Kabhii dunya ki khwaish mein mujhe gham naak kerta hy

Merii mitti mein ek pathar garra hy hijr-e-asswad sa
Khata'aaeiN jazb ker lay'taa hy, Mujh ko Pak kerta hy

Ham'kalam




لوگوں نے گفتگو میں کریدا بہت ہمیں
ہم خود سے ہمکلام تھے اکثر نہیں ملے

----------------------------------------------

Logon Ne Guft'goo Main Kureda Buhat Hamain
Ham Khud Se Hamkalam they, Aksar Nahi Miley

Koi Dekhey




 
کوئی دیکھے تو میرا حجرہء۔ ذات
یاں سب ہی کچھ وہ تھا ،جو تھا ہی نہیں
 

Koi dekhay tou mera hujra -e- zaat
 Yaan sab he kuch woh tha' jo tha he nahin

Tumhari Mis'l


تمہاری مثل ناممکن ہے صاحب
تمہارا عکس بھی تم سا نہیں ہے

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Tumhari Mis'l Na'mumkin hai Sahib
Tumhara Akss Bhi Tum Sa nahi

Sawal Yeh Hai



سوال یہ تو نہیں ہوگی گفتگو کیسے
سوال یہ ہے کہ قائم رہیں گے ہوش و حواس؟
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Sawal Yeh To Nahi Hogi Guft'gu Kaise,
Sawal Yeh Hai K Qa'eim Rhain Ge Hosh o Hawaas?.

بدھ, فروری 20, 2013

Ik Lafz Mohabbat



اک لفظِ محبت کا ادنیٰ یہ فسانہ ہے
سمٹے تو دلِ عاشق، پھیلے تو زمانہ ہے

یہ کِس کا تصوّر ہے، یہ کِس کا فسانہ ہے؟
جو اشک ہے آنکھوں میں، تسبیح کا دانہ ہے

دل سنگِ ملامت کا ہرچند نشانہ ہے
دل پھر بھی مرا دل ہے، دل ہی تو زمانہ ہے

ہم عشق کے ماروں کا اتنا ہی فسانہ ہے
رونے کو نہیں کوئی، ہنسنے کو زمانہ ہے

وہ اور وفا دشمن، مانیں گے نہ مانا ہے
سب دل کی شرارت ہے، آنکھوں کا بہانہ ہے

شاعرہوں میں شاعر ہوں، میرا ہی زمانہ ہے
فطرت مرا آئینہ، قدرت مرا شانہ ہے

جو اُن پہ گزرتی ہے، کس نے اُسے جانا ہے؟
اپنی ہی مصیبت ہے، اپنا ہی فسانہ ہے

آغازِ محبت ہے، آنا ہے نہ جانا ہے
اشکوں کی حکومت ہے، آہوں کا زمانہ ہے

آنکھوں میں نمی سی ہے چُپ چُپ سے وہ بیٹھے ہیں
نازک سی نگاہوں میں نازک سا فسانہ ہے

ہم درد بدل نالاں، وہ دست بدل حیراں
اے عشق تو کیا ظالم، تیرا ہی زمانہ ہے

یا وہ تھے خفا ہم سے یا ہم ہیں خفا اُن سے
کل اُن کا زمانہ تھا، آج اپنا زمانہ ہے

اے عشق جنوں پیشہ! ہاں عشق جنوں پیشہ
آج ایک ستمگر کو ہنس ہنس کے رُلانا ہے

تھوڑی سی اجازت بھی، اے بزم گہہ ہستی
آ نکلے ہیں، دم بھر کو رونا ہے، رُلانا ہے

یہ عشق نہیں آساں، اتنا ہی سمجھ لیجئے
اک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے

خود حسن وشباب ان کا کیا کم ہے رقیب اپنا
جب دیکھئے، تب وہ ہیں، آئینہ ہے، شانا ہے

ہم عشقِ مجسّم ہیں، لب تشنہ ومستسقی
دریا سے طلب کیسی، دریا کو رُلانا ہے

تصویر کے دو رُخ ہیں جاں اور غمِ جاناں
اک نقش چھپانا ہے، اک نقش دِکھانا ہے

یہ حُسن وجمال اُن کا، یہ عشق وشباب اپنا
جینے کی تمنّا ہے، مرنے کا زمانہ ہے

مجھ کو اسی دُھن میں ہے ہر لحظہ بسر کرنا
اب آئے، وہ اب آئے، لازم اُنہیں آنا ہے

خوداری و محرومی، محرومی و خوداری
اب دل کو خدا رکھے، اب دل کا زمانہ ہے

اشکوں کے تبسّم میں، آہوں کے ترنّم میں
معصوم محبت کا معصوم فسانہ ہے

آنسو تو بہت سے ہیں آنکھوں میں جگر لیکن
بندھ جائے سو موتی ہے، رہ جائے سو دانا ہے
جگرمرادآبادی

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~


Buhat Shartain Lagatey Ho





بہت شرطیں لگاتے ہو۔۔۔۔

۔۔ بہت شرطوں کے شائق ہو۔

۔۔کبھی جو ھار جاؤگے تو سب کچھ ھار جاؤگے

۔تمنائیں بکھر کر خار بن کر جب چبھیں گی تیرے سینے میں۔

تو سانسوں کی روانی کھردرے رستوں پہ چل کر زندگی مصلوب کر دیں گی ۔۔

بہت شرطیں لگاتے ہو۔۔ بہت شرطیں لگاتے ہو۔

ذرا سوچو۔ ذرا سمجھو کہ جو مشروط ہوتا ہے ہمیشہ چھوڑ جاتا ہے۔

کہ شرطوں سے بھلا کب زندگی کا کار چلتا ہے۔

کہ شرطوں سے بھلا کب زیست کا بیوپار چلتا ہے۔

بہت شرطیں لگاتے ہو۔۔۔۔۔۔۔۔۔

محبت شرط کا دھندا ہے تو جذبوں کا پھندا ہے ۔

۔بہت شرطیں لگاتے ہو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۔۔ کبھی جو ھار جاؤ گے تو سب بیکار جائے گا

منگل, فروری 12, 2013

Tera Naseeb



ترا نصیب بنوں تیری چاھتوں میں رھوں
تمام عمر محبت کی وحشتوں میں رھوں

خمار ِحسرت ِدیدار میں رھوں ھر دم
سواد ِعشق ! یونہی تیری شدتوں میں رھوں

یہ زندگی کی حرارت ترے سبب سے ھے
میں لمحہ لمحہ جنوں کی تمازتوں میں رھوں

یہ اھتمام ِشب و روز ھو مری خاطر
ترے خیال کی رنگین خلوتوں میں رھوں

سنوارتی ہیں سدا جس کی چاھتیں مجھ کو
مری دعا ھے میں اُسکی ہی حسرتوں میں رھوں

اے ابر ِ وصل برس اور کُھل کے مجھ پہ برس
میں بھیگی بھیگی ھوا کی شرارتوں میں رھوں

شریک ِشوق ِ سفر ھے اگر وہ میرا ناز
میں کیوں نہ موسم ِگل کی بشارتوں میں رھوں

ناز بٹ

-----------------------------------------------------

Tera Naseeb Banoon Teri Chahaton Main Rahoon
Tamam Umr Mohabbat Ki Wehshaton Main Rahoon

Khumar-e-Hasrat-e-Deedaar Main Rahoon Har Dam
Sawad-e-Ishq! Younhi Teri Shiddaton Main Rahoon

Yeh Zindagi Ki Hararat Tere Sabab Se Hai
Main Lamha Lamha Junoon Ki Tamazaton Main Rahoon

Yeh Ehtemam-e-Shab-o-Roz Ho Meri Khaatir
Tere Khayal Ki Rangeen Khilwaton Main Rahoon

Sanwarti Hain Sada Jis Ki chahatain Mujh Ko
Meri Dua Hai Main Us Ki Hi Hasraton Main Rahoon

Aye Abr-e-Wasl Baras aur Khul Ke Mujh Pe Baras
Main Bheegi Bheegi Hawa Ki Shararton Main Rahoon

Shareek-e-Shoq-e-Safar Hai Agar Woh Mera NAZ
Main Kyun Na Mausam-e-Gul Ki Bashaarton Main Rahoon

Naz Butt

سوموار, فروری 11, 2013

Hamsafar


ہم سفر چاہئیے ہجوم نہیں
اک مسافر بھی قافلہ ہے مجھے

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Hamsafar Chahiye Hujoom Nahi
Ik Musaafir Bhi Qaafla Hai Mujhey

Zameer



خدا نہيں ہے تو کيا ہے . . .ہمارے سينوں ميں
وہ اک کھٹک سی جسے ہم ضمير کہتے ہيں

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Khuda Nahi Hai To Kiya Hai... Hamarey Seenon Main
Woh Ik Khatak Si Jisey Ham Zameer Kehte Hain

ہفتہ, فروری 09, 2013

Chalti hain dil ke sheher main



چلتی ہیں دل کے شہر میں یونہی حکومتیں
بس جو بھی اس نے کہہ دیا دستور ہوگیا...

--------------------------------------------

Chalti Hain Dil Ke Sheher Main Younhi Hukoomatain
Bas Jo Bhi Us Ne Keh Diya Dastoor Ho Gaya

Qarar-e-jaan bhi tumhi



قرارِ جاں بھی تمھی، اضطرابِ جاں بھی تمھی
مرا یقیں بھی تمھی ہو، مِرا گماں بھی تمھی

یہ کیا طِلسم ہے، دریا میں بن کے عکسِ قمر
رُکے ہوئے بھی تمھی ہو، رواں دواں بھی تمھی

خدا کا شکر، مرا راستہ معیّن ہے
کہ کارواں بھی تمھی، میرِ کارواں بھی تمھی

تمھی ہو جس سے ملی مجھ کو شانِ استغنا
کہ میرا غم بھی تمھی، غم کے رازداں بھی تمھی

نہاں ہو ذہن میں وجدان کا دُھواں بن کر
افق پہ منزلِ ادراک کا نشاں بھی تمھی

تمام حُسنِ عمل ہوں، تمام حُسنِ بیاں
کہ میرا دل بھی تمھی ہو، مرِی زباں بھی تمھی ۔

احمد ندیم قاسمی
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
 Qarar-e-jaan bhi tumhi, izterab-e-jaan bhi tumhi
Mera yaqeen bhi tumhi ow, mera gumaan bhi tumhi

Yeh kiya Tlism hai, dariya main ban ke aks-e-qamar
Rukey hue bhi tumhi ho, rawan dawan bhi tumhi

Khud ka shukr mera raasta mua'yan hai
Ke kaarwan bhi tumhi, meer-e-kaarwan bhi tumhi

Tumhi ho jis se mili mujh ko shan-e-istaghna
Ke mera gham bhi tumhi, gham ke raazdaan bhi tumhi

Nihaan ho zehn main wajdan ka dhuwan ban kar
Ufaq pe manzil-e-idraak ka nishaan bhi tumhi

Tamam husn-e-amal hoon, tamam husn-e-bayan
 Ke mera dil bhi tumhi ho, meri zabaan bhi tumhi

Ahmad Nadeem Qasmi

جمعہ, فروری 08, 2013

Veeran Buhat Hoon



Veeran Bohat Hoon VasL Se TashkeeL Kar Mujhe 
 Tu Mujh Se PyaaR Kar Zara TabdeeL Kar Mujhe 

Sehra Ki Tapti Rait Se Aa Kar Mujhe Bacha 
Tu Thanday Meethay Pani Ki Ek JheeL Kar Mujhe

 Ho Ja'yn Na Kharab Kah!n Meri aadatain 
Har Hukum Par Na Is Tarha Taa'meeL Kar Mujhe 

Ab Is Tarha Se Mujhko Adhura Na Choorr Tu 
 Ma!n Hoon Tera vVada Tu Ab TakmeeL Kar Mujhe 

Chu Kar Mera vVajood TajjaLLi Si Bakhsh Day 
Ma!n Ek Andhairi Raat Hoon TaweeL Kar Mujhe..!!

Ab Aur Tab



کہا اس نے
مجھے تب واقعی تم سے محبّت تھی
کہا میں نے
مجھے تو آج بھی تم سے محبّت ہے

وہ تب کی بات کرتا ہے
میں اب کی بات کرتا ہوں
مگر جو فاصلہ
تب اور اب کے درمیاں حائل ہے
وہ مل کر بھی سمیٹا جا نہیں سکتا

وہ اب تک آ نہیں سکتا
میں تب کو پا نہیں سکتا

(قتیل شفائی)

Jab Kabhi



Jab Kabhi Dhoop Ki Shiddat Ne Sataaya Mujhko
Yaad Aaya Bohat Ek Perh Ka Saaya Mujhko

Ab Bhi Raushan Hain Teri Yaad Se Ghar K Kamre
Roshni Deta Hai Ab Tak Tera Saaya Mujhko

Meri Khwaahish Thi K Main Roshni Baantoo Sab Ko
Zindagi ! Tunay bohat Jald Bujhaaya Mujhko

Chhahne Waalon Ne Koshish Tu Bohat Ki Lekin
Kho Gayaa Main Tu Koi Dhoondh Na Paaya Mujhko

Sakht Hairat Mein Pari Maut Yeh Jumla Sun Kar
Aa Adaa Karna Hai Saanson Ka Kiraaya Mujhko

Shukriyaa Tera Ada Karta Hoon Jaate Jaate
Zindagi ! Tunay Bohat Roz Bachaaya Mujhko.

Chaand Ka Haala



پانیوں پانیوں جط چاھند کا ہالہ اترا
نیند کی جھیل پر اک خواب پرانا اترا

آزمائش میں کہاں عشق بھی پورا اترا
حسن کے آگے تو تقدیر کا لکھا اترا

دھوپ ڈھلنے لگی دیوار سے سائے اترے
سطح ہموار ہوئی پیار کا دریا اترا

یاد سے نام مٹا ذہن سے چہرہ اترا
چند لمحوں میں نظر سے تیری کیا کیا اترا

آج کی شب میں پریشاں ہوں تو یوں لگتا ہے
آج مہتاب کا چہرہ بھی ہے اترا اترا

میری وحشت رمِ آہو سے کہیں بڑھ کے تھی
جب میری ذات میں تنہائی کا صحرا اترا

اک شبِ غم کے اندھیرے پہ نہیں ہے موقوف
تُو نے جو زخم لگایا ہے وہ گہرا اترا      
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
 
Paniyon Paniyon Jab Chand Ka Haala Utraa
Neend Ki Jheel Par Ek Khwab Purana Utraa,

Aazmaesh Mein Kahaan Ishq Bhi Poora Utra
Husn Kay Aage To Taqdeer ka Likha Utraa,

Dhoop Dhalne Lagi, Dewaar Se Saaya Utra
Satah Humwaar Hoi Piyar Ka Dariya Utraa,

Yaad Se Naam Mita Zehn Se Chehra Utraa
Chand Lamhun Mein Nazar Se Teri Kiya Kiya Utraa,

Aaj Ki Shab Main Pareshaan Hoon To Yoon Lagta Hai
Aaj Mahtaab Ka Chehra Bhi Hai Utraa Utraa,

Meri Wehshat Ram-e-Aahu Se kaheen Barh Kar Thi
Jab Meri Zaat Mein Tanhai Ka Sehraa Utraa,

Ek Shab-e-Gham K Andhere Pe Nahi hai Maoqoof
Tune Jo Zakhm Lagaya Hai Woh Gehra Utraa.

جمعہ, فروری 01, 2013

Mohabbat



Mohabbat Aesa Sapna Hai.......!
Jise Jitna Koi Dekhe, Naya Mehsoos Hota Hai........!

Mohabbat Aesa Manzar Hai........!
Jise Tasawvoor Karne Mein, Zamaane Beet Jate Hain........!

Mohabbat Aisa Waada Hai........!
Kisi Ke Sath Ho Jaye, To Phir Torra Nahi Jata........!

Mohabbat Woh Taaluq Hai........!
Ke! Jis Ke Sath Ho Jaye, Us Se Chora Nahi Jata........!

Mohabbat Ek Paheli Hai........!
Ke! Jis Ko Raas Aa Jaye, To Phir Us Ki Saheli Hai........!

Mohabbat Woh Kahaani Hai........!
Ke! Jitna Bhi Koi Bhulaaye, Humesha Yaad Rehti Hai...