جمعہ, فروری 08, 2013

Chaand Ka Haala



پانیوں پانیوں جط چاھند کا ہالہ اترا
نیند کی جھیل پر اک خواب پرانا اترا

آزمائش میں کہاں عشق بھی پورا اترا
حسن کے آگے تو تقدیر کا لکھا اترا

دھوپ ڈھلنے لگی دیوار سے سائے اترے
سطح ہموار ہوئی پیار کا دریا اترا

یاد سے نام مٹا ذہن سے چہرہ اترا
چند لمحوں میں نظر سے تیری کیا کیا اترا

آج کی شب میں پریشاں ہوں تو یوں لگتا ہے
آج مہتاب کا چہرہ بھی ہے اترا اترا

میری وحشت رمِ آہو سے کہیں بڑھ کے تھی
جب میری ذات میں تنہائی کا صحرا اترا

اک شبِ غم کے اندھیرے پہ نہیں ہے موقوف
تُو نے جو زخم لگایا ہے وہ گہرا اترا      
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
 
Paniyon Paniyon Jab Chand Ka Haala Utraa
Neend Ki Jheel Par Ek Khwab Purana Utraa,

Aazmaesh Mein Kahaan Ishq Bhi Poora Utra
Husn Kay Aage To Taqdeer ka Likha Utraa,

Dhoop Dhalne Lagi, Dewaar Se Saaya Utra
Satah Humwaar Hoi Piyar Ka Dariya Utraa,

Yaad Se Naam Mita Zehn Se Chehra Utraa
Chand Lamhun Mein Nazar Se Teri Kiya Kiya Utraa,

Aaj Ki Shab Main Pareshaan Hoon To Yoon Lagta Hai
Aaj Mahtaab Ka Chehra Bhi Hai Utraa Utraa,

Meri Wehshat Ram-e-Aahu Se kaheen Barh Kar Thi
Jab Meri Zaat Mein Tanhai Ka Sehraa Utraa,

Ek Shab-e-Gham K Andhere Pe Nahi hai Maoqoof
Tune Jo Zakhm Lagaya Hai Woh Gehra Utraa.

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں