اشاعتیں

November, 2015 سے پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

زبانیں جہاں گنگ ہیں ، لفظ ششدر

تصویر
حرم کی مقدس فضاؤں میں گم ہوں
میں جنت کی ٹھنڈی ہواؤں میں گم ہوں

میں بے گانہ ہوکر ہر اک ماسوا سے
بس اک آشنا کی وفاؤں میں گم ہوں

زبانیں جہاں گنگ ہیں ، لفظ ششدر
تحیر کی ایسی فضاؤں میں گم ہوں

میں کعبے کے بے آب و رنگ پتھروں سے
کرم کی امڈتی گھٹاؤں میں گم ہوں

کبھی سنگِ اسود کی کرنوں سے حیراں
کبھی ملتزم کی دعاؤں میں گم ہوں

مقفل ہے در ، لٹ رہے ہیں خزانے
عطا کی نرالی اداؤں میں گم ہوں

ہر اک دل سے ظلمت کے دل چھٹ رہے ہیں
غلافِ سیہ کی ضیاؤں میں گم ہوں

جو میرے گناہوں کو بھی دھو رہی ہے
میں رحمت کی ان انتہاؤں میں گم ہوں

یہ میزابِ رحمت پہ پُر درد نالے
فلک سے برستی عطاؤں میں گم ہوں

یہ زمزم کے چشمے ، یہ پیاسوں کے جمگھٹ
زمیں سے ابلتی شفاؤں میں گم ہوں

جو اس آستاں کے لگاتے ہیں پھیرے
میں ان کے جنوں کی اداؤں میں گم ہوں

کھڑے ہیں بھکاری ترے در کو تھامے
میں ان کی بلکتی صداؤں میں گم ہوں

یہ سینے سے اٹھتی ندامت کی آہیں
میں ان دردِ دل کی دواؤں میں گم ہوں

یہ کعبے کے درباں ، یہ نازوں کے پالے
میں ان کی پیاری جفاؤں میں گم ہوں

تصور میں یادوں کی محفل سجی ہے
تخیل کی دلکش خلاؤں میں گم ہوں

ابھی شرحِ الفت کی منزل کہاں ہے
ابھی …

آج کی بات ۔۔۔۔ 29 نومبر 2015

تصویر
علم یہ ہے کہ آپ کو معلوم ہوکہ 'کیا' کہنا ہے حکمت یہ ہے کہ آپ کو معلوم ہو کہ 'کب' کہنا ہے

ایک سوال

تصویر
اگر کوئی آپ کی ساری زندگی کے تجربوں کا نچوڑ مانگے تو آپ کا جواب کیا ہوگا۔۔۔؟؟

دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ

تصویر
آواز مفتی تقی عثمانی

دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ آج اپنی خطاؤں کا ۔۔۔ لادے ہوئے پشتارا
سرگشتہ و درماندہ ۔۔۔ بے ہمت و ناکارہ وارفتہ و سرگرداں۔۔ بے مایہ و بے چارہ شیطاں کا ستم خوردہ ۔۔ اس نفس کا دکھیارا ہر سمت سے غفلت کا ۔۔۔ گھیرے ہوئے اندھیارا
دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ
جذبات کی موجوں میں ۔۔۔ لفظوں کی زباں گم ہے عالم ہے تحیر کا ۔۔۔ یارائے بیاں گم ہے مضمون جو سوچا تھا ۔۔۔ کیا جانے کہاں گم ہے آنکھوں میں بھی اشکوں کا ۔۔۔ اب نام و نشاں گم ہے سینے میں سلگتا ہے ۔۔۔ رہ رہ کے اک انگارہ
دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ

آیا ہوں ترے در پر ۔۔۔ خاموش نوا لے کر نیکی سے تہی دامن ۔۔۔ انبارِ خطا لے کر لیکن تری چوکھٹ سے ۔۔۔ امیدِ سخا لے کر اعمال کی ظلمت میں ۔۔۔ توبہ کی ضیا لے کر سینے میں تلاطم ہے ۔۔۔ دل شرم سے صدپارہ
دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ
امید کا مرگز ہے ۔۔۔ رحمت سے بھرا گھر ہے اس گھر کا ہر اک ذرہ ۔۔۔ رشکِ مہ و اختر ہے محروم نہیں کوئی ۔۔۔ جس در سے یہ وہ در ہے جو اس کا بھکاری ہے ۔۔۔ قسمت کا سکندر ہے یہ نور کا قلزم ہے ۔۔۔ یہ امن کا فوّارہ
دربار میں حاضر ہے ۔۔۔ اک بندۂ آوارہ
یہ کعبہ کرشمہ ہے ۔…

کوا چلا ہنس کی چال

تصویر
نومبر کے شروع میں فیس بک پر ایک اشتہار پر نظر پڑی کہ ” بلیک فرائیڈے پر شاپنگ کریں حیرت انگیز کم قیمت پر“ ۔۔۔ میں نے سوچا کہ یہ بلیک فرائیڈے کیا نئی بلا آگئی اب کس قسم کا یوم سیاہ ہے ۔۔ گوگل سے مدد لی تو معلوم ہوا اس بلا کا ۔۔۔ سو سب سے پہلے مجھے جو پتا چلا اس بارے میں وہ گوش گذار کردوں: بلیک فرائیڈے اور یوم شکرانہ (thanksgiving) اس کے بعد اتفاق سے میرے پاس آج ایک ای میل آئی جس میں اس دن کی پرزور مذمت کی گئی تھی تو میں نے سوچا کہ کچھ اظہار خیال میں بھی کرلوں اس پر۔ تو جیسا کے اس کی تاریخ سے واضح ہوتا ہے کہ دن خاص طور پر امریکہ اور کینیڈا میں منایا جاتا ہے بلکہ ان کا "قومی" اور "ثقافتی" تہوار ہے ۔۔۔ مگر نہ جانے ہم کیوں اتنے عقل کے اندھے ہوئے جا رہے ہیں کہ اندھا دھند تقلید کیے جا رہے ہیں ترقی یافتہ کہلانے کے شوق میں ۔۔۔ یہ جانے بغیر کہ ترقی یافتہ بننے کے لیے محنت کرنی پڑتی ہے، مخلص ہونا پڑتا ہے اپنے مذہب سے، اپنے ملک سے اور اپنے کام سے مگر ہم صرف ان کے تہواروں کو اپنے معاشرے میں پیوست کرتے جا رہے ہیں ان کا پس منظر جانے بغیراپریل فول ڈے، ویلنٹائین ڈے، مدر ڈے، فادر ڈے، اور…

کیا ہم نے سورہ الفاتحہ پڑھی ہے؟

تصویر
کیا آپ نے سورۃ فاتحہ پڑھی ہے؟
پروفیسر محمد عقیل(کراچی) --------------------------------------------
کیا تم نے سورہ فاتحہ پڑھی ہے؟ ایک بزرگ نے اس سے پوچھا۔
" ہاں ہاں ! کیوں نہیں! ہر روز نماز میں پڑھتا ہوں؟" اس نے تعجب سے جواب دیا۔ " اچھا ذرا پہلی آیت پڑھ کر سناؤ۔" بزر گ نے کہا
"الحمد للہ رب العالمین۔ یعنی تمام تعریف اللہ رب العالمین ہی کے لیے ہے۔" اس نے جواب دیا
" اچھا تم فیس بک پر تصاویر لائیک کرتے ہو، کیا تم نے کبھی خدا کی مصوری کو بھی لائیک کیا؟ تم فلمی ستاروں کی تعریف کرتے ہو، کبھی خدا کے ستاروں کی تعریف کی؟ تم کاغذ کے پھولو ں سے جی بہلاتے ہو، کبھی خدا کے گلزاروں کو چاہنے کی کوشش کی؟
" نہیں یہ تو میں نے کبھی نہیں کیا؟"
" تو پھر تم نے یہ آیت پڑھی ہی نہیں۔ اچھا آگے پڑھو۔"
"الرحمٰن الرحیم، مالک یوم الدین۔ یعنی وہ رحمان ہے اور رحیم ہے اور روز جزا کا مالک ہے۔"
" کیا تم نے کبھی غور کیا کہ وہ کس طرح مخلوق پر محبت اور شفقت نچھاور کرتا نظر آتا ہے ؟ مخلوق کی بات سنتا ہے، ان کی غلطیوں پر تحمل سے پیش آتاہے…

آج کی بات ۔۔۔ 25 نومبر 2015

تصویر
علم یہ نہیں کہ بات کتنی گہری ہے اور الفاظ کتنے مشکل ہیں,  علم یہ ہے کہ بات کتنی ضروری ہے اور الفاظ کتنے سادہ ہیں۔

اللہ اکبر

تصویر
اللہ اکبر کے الفاظ وہ سب سے بڑی حقیقت ہیں جو کسی انسان کی زبان سے ادا ہو سکتے ہیں ۔ یہ اتنے بڑے الفاظ ہیں کہ آسمان و زمین بھی ان کی عظمت کا تحمل نہیں کرسکتے، مگر شرط یہ ہے کہ یہ الفاظ اپنی اصل اسپرٹ کے ساتھ پڑھے جائیں ۔ ان الفاظ کی اصل اسپرٹ یہ ہے کہ ایک بندہ عاجز یہ دریافت کر لے کہ یہ عظیم ترین کائنات ، سورج، چاند، ستارے ، شجر و حجر، چرند و پرند، ہواپانی، دریا صحرا، خشکی و تری، بلندی و پستی، انسان و حیوان، مرد و عورت سب کا مالک ایک ہی ہے ۔ اور وہی میرا بھی مالک ہے ۔ میرا ہر خیر و شر، خوشی و غمی، نفع و ضرر اسی کے ہاتھ میں ہے۔ میں عاجز مطلق ہوں وہ قادر مطلق ہے ۔ میں کچھ بھی نہیں وہ سب کچھ ہے ۔
یہی احساس اللہ اکبر ہے۔ یعنی اللہ بڑا ہے اور میں چھوٹا ہوں ۔ مگرجیسا کہ ایک عارف باللہ نے ٹھیک کہا ہے۔ آج اللہ اکبر کا مطلب یہ بن گیا ہے کہ اللہ بڑا ہے اور تم چھوٹے ہو۔ لوگوں نے اللہ کی عظمت کا مطلب یہ سمجھا ہے کہ دوسروں کو چھوٹا سمجھا جائے ۔ حالانکہ اللہ کی عظمت وہی شخص دریافت کرتا ہے جو اپنے چھوٹے ہونے کو جان لے ۔ ایسا شخص دوسروں کی خامیاں دریافت کرنے اور ان کے عیوب ڈھونڈنے کے بجا…

آج کی بات ۔۔۔ 17 نومبر 2015

تصویر
آدمی کو چاہئے کہ وه حقیقت پسند بنے - وه خواہشوں کے پیچهے نہ دوڑے - کیوں کہ خواہشیں آدمی کو گڑهے کے سوا کسی اور منزل پر پہنچانے والی نہیں -

آج کی بات ۔۔۔ 14 نومبر 2015

تصویر
دراصل تنہائی کے لمحات ہی حق اور سچ ہوتے ہیں انسان اس وقت ”ریئل“ ہوتا ہے جب وہ اکیلا ہو.

یادِ حرم

تصویر
مجھے فرقت میں رہ کر پھر وہ مکہ یاد آتا ہے وہ زم زم یاد آتا ہے، وہ کعبہ یاد آتا ہے
پہن کر صرف دو کپڑے میرا وہ چیختے پھرنا وہ پوشش یاد آتی ہے، وہ نعرہ یاد آتا ہے
جہاں جا کر میں سر رکھتا، جہاں میں ہاتھ پھیلاتا وہ چوکھٹ یاد آتی ہے، وہ پردہ یاد آتا ہے
کبھی وہ دوڑ کر چلنا کبھی رک رک کے رہ جانا وہ چلنا یاد آتا ہے، وہ نقشہ یاد آتا ہے
کبھی وحشت میں آ کر پھر صفا پر جا کے چڑھ جانا وہ مسعیٰ یاد آتا ہے، وہ مروہ یاد آتا ہے
کبھی چکر لگانا حاجیوں کی صف میں لڑ بھڑ کر وہ دھکے یاد آتے ہیں، وہ جھگڑا یاد آتا ہے
کبھی پھر ان سے ہٹ کر دیکھنا کعبے کو حسرت سے وہ حسرت یاد آتی ہے، وہ کعبہ یاد آتا ہے
کبھی جانا منیٰ کو اور کبھی میدانِ عرفہ کو وہ مجمع یاد آتا ہے، وہ صحرا یاد آتا ہے
وہ پتھر مارنا شیطان کو تکبیر پڑھ پڑھ کر وہ غوغا یاد آتا ہے، وہ سودا یاد آتا ہے
منیٰ میں لوٹ  کر قربانی کرنا میرا دنبے کو وہ سنت یاد آتی ہے، وہ فدیہ یاد آتا ہے
منیٰ سے سر منڈا کر دوڑ جانا میرا کعبے کو وہ زیارت یاد آتی ہے، وہ جانا یاد آتا ہے
منیٰ میں رہ کے راتوں میں دعائیں مانگنا میرا وہ نالے یاد آتے ہیں، وہ گِریہ یاد آتا ہے
وہ رخصت ہو کے میرا دیکھنا کعبے کو مڑ م…

آج کی بات ۔۔۔ 13 نومبر 2015

تصویر
کسی کے پاس رہنا ہو تو تھوڑا دور رہنا چاہئے ۔۔۔۔

یوم اقبال

تصویر
ہو حلقہ یاراں تو بریشم کی طرح نرم
رزم حق و باطل ہو تو فولاد ہے مومن
خرد نے کہہ بھی دیا لا الہ تو کیا حاصل
دل و نگاہ مسلماں نہیں تو کچھ بھی نہیں



کی محمداﷺ سے وفا تو نے تو ہم تیرے ہیں
یہ جہاں چیز ہے کیا لوح و قلم تیرے ہیں

گفتار میں، کردار میں، اللہ کی برہان!

تصویر
مرد مسلمان
ہر لحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن
گفتار میں، کردار میں، اللہ کی برہان!

قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت
یہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان

ہمسایۂ جبریل امیں بندۂ خاکی
ہے اس کا نشیمن نہ بخارا نہ بدخشان

یہ راز کسی کو نہیں معلوم کہ مومن
قاری نظر آتا ہے ، حقیقت میں ہے قرآن!

قدرت کے مقاصد کا عیار اس کے ارادے
دنیا میں بھی میزان، قیامت میں بھی میزان

جس سے جگرِ لالہ میں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم
دریاؤں کے دل جس سے دہل جائیں، وہ طوفان

فطرت کا سرود ازلی اس کے شب و روز
آہنگ میں یکتا صفت سورۂ رحمن

بنتے ہیں مری کار گہ فکر میں انجم
لے اپنے مقدر کے ستارے کو تو پہچان

میرے ڈائری، میرا آئینہ (ذاتی کاوش)

تصویر
نومبر 2011 میں ایک ویب ریڈیو سے وابستگی کے دوران "ڈائری" کے موضوع پر کیے گئے پروگرام کے لئے کچھ اپنی کاوش شامل کرنے کی کوشش کی تھی۔۔۔ فیس بک کے ذریعے 3 دن پہلے مجھے نظر آئی تو یاد تازہ ہو گئی سوچا یہاں بھی پوسٹ کروں۔ 
"میری ڈائری، میرا آئینہ"
ہے یہ میری ذات کا اک بایں ملے اس میں مجھ کو میرا نہاں میرے ذوق کا، میرے شوق کا میرے درد کا، میرے چین کا میری ہر خوشی، میرا کوئی دکھ وہ ہے اس کے ورق پر عیاں کبھی اس کو کھول کے دیکھوں تو یہ ملاتی ہے میری ذات سے میں نے کب لکھا؟ میں نے کیوں لکھا؟ یہ ملاتی ہے اسی یاد سے کوئی اس کو اپنی سکھی کہے کوئی یہ کہے، میری رازداں مگر میں تو بس اسے یہ کہوں "میری ڈائری، میرا آئینہ"

آج کی بات ۔۔۔ 08 نومبر 2015آ

تصویر
جو حق کی مخالفت کرتے ہیں وہ اندھے شیطان ہوتے ہیں اور جو اس کا ساتھ نہیں دیتے وہ گونگے شیطان ہوتے ہیں۔

ابو یحییٰ

کاسہ

تصویر
"کاسہ"
بادشاہ نے فقیر سے خوش ہو کر کہا "مانگو کیا مانگتے ہو"
فقیر نے کہا " حضور بس میرا یہ کاسہ بھر دیجئے ،، مجھے اور کچھ نہیں چاہئے "
بادشاہ ہنسا اور کہنے لگا "بس ...." .... پھر اس نے اپنے سارے پہنے ہوۓ جواہرات کاسے میں ڈال دئے ، مگر کاسہ نہ بھرا ،،،،،، بادشاہ بڑا حیران ہوا ، مگر یہ اسکی عزت کا معاملہ تھا ،،اس نے وزیروں کو حکم دیا ... وہاں موجود سارے وزیروں نے بھی اپنے اپنے جواہرات اتار کر کاسے میں ڈالے ،، پھر بھی کاسہ خالی کا خالی ...
اب بادشاہ نے سلطنت کے خزانے کا منہ کھول دیا ....... سلطنت کا سارا خزانہ کاسے میں ڈال دیا گیا ، مگر کاسہ پھر بھی خالی ہی رہا ..
فقیر مسکراتے ہوۓ واپس جانے لگا ،، بادشاہ ہاتھ باندھ کر کھڑا ہو گیا ، کہنے لگا "حضور ، صرف اتنا بتا دیں کہ یہ پیالہ ہے کیا چیز ؟"
فقیر نے جواب دیا ..
"حضور یہ خواہشات کا پیالہ ہے ،،اسے قبر کی مٹی کے علاوہ کوئی چیز نہیں بھر سکتی"


مجھے یہ واقعہ یاد نہ آتا اگر میں توفیق صاحب سے نہ ملتا ... میں کل قائد_اعظم لائیبریری میں بیٹھا اسٹڈی کر رہا تھا کہ چار بجے کے قریب مجھے بھوک محسوس ہوئ…

سفر مدینہ 2015

تصویر
سفرِ حج 2015 کے دوران زیارات مدینہ

جب مسجد نبوی کے مینار نظر آئے
اللہ کی رحمت کے آثار نظر آئے

منظر ہو بیاں کیسے ، الفاظ نہیں ملتے
جس وقت محمد ( صلی اللہ علیہ وسلم) کا دربار نظر آئے


جنت البقیع 


مسجد قباء ( اسلام کی پہلی مسجد)



مدینہ میں قباء کے نزدیک بستی کے آثار جس جگہ حضورﷺ کی مدینہ آمد کے موقع پر وہاں کی بچیوں سے آپ کا استقبال کیا تھا

جبل احد 
شہدائے احد کا احاطہ اور حضرت حمزہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا مزار

مسجد ذو قبلتین

مسجد فتح ( غزوہ خندق کے مقام پر) 

آج کی بات ۔۔۔ 05 نومبر 2015

تصویر
آج کا انسان ایک نا معلوم اندیشے سے دوچار ہے۔ اندیشے کی ضد امید ہے۔ امید اس خوشی کا نام ہے، جس کے سہارے غم کے ایؔام بھی کٹ جاتے ہیں۔ فطرت کے مہربان ہونے پر یقین کا نام امید ہے۔ جس طرح موسم بدلنے کا ایک وقت ہوتا ہے اسی طرح وقت بدلنے کا بھی ایک موسم ہوتا ہے
واصف علی واصف

زیاراتِ مکہ 2015

تصویر
ہمارے 2015 کے سفرِ حج کے دوران زیاراتِ مکہ کی چند تصاویر۔


جبل ثور جہاں غار ثور واقع ہے

جبل الرحمتہ (عرفات)



نہر زبیدہ کے آثار  نہر زبیدہ

مسجد مشعر الحرام (مزدلفہ)
جبل نور ( غار حرا)
مسجد جن

زمرہ جات

سوئے حرم رمضان غزلیں امید سورہ البقرہ دعا سفرِ حج ایمان، استقبال رمضان، خطبہ مسجد نبوی میرے الفاظ پاکستان شاعری میری شاعری محبت یاد حرم صراط مستقیم لبیک اللھم لبیک خلاصہ قرآن سفرنامہ شکر اچھی بات، نعت رسول مقبول توبہ حج 2015 حج 2017 حمد باری تعالٰی خوشی کچھ دل سے #WhoIsMuhammad سورۃ الکہف ملی ترانے نمل استغفار توکل دوستی سفر مدینہ سورہ الرحمٰن پیغامِ حدیث، حکمت کی باتیں سورہ الکوثر سورہ الکھف علامہ اقبال علم 9نومبر آزادی باغبانی سورہ المؤمنون عید مبارک فارسی اشعار، قائد اعظم قرآن کہانی ماں معلومات نمرہ احمد یوم دفاع آبِ حیات جنت جنت کے پتے خطبہ حجتہ الوداع خطبہ مسجد الحرام رومی، زیارات مکہ سورۃ الناس شکریہ قربانی محمد، محمد، سوشل میڈیا، نیا سال، 2017 والد پیغام اقبال یوم پاکستان 11-12-13 16December2014 APS اردو محاورہ جات بارش تقدیر حج 2016 حیا، ذرا مسکرائیے سورج گرہن 2015 سورہ العلق، سورۃ العصر سورۃ الفاتحہ، سوشل میڈیا سوشل میڈیا، طنز و مزاح عاطف سعید عورت قرآن لیس منا مسدس حالی مصحف موسیقی یوم خواتین، عورت
اور دکھائیں

سبسکرائب بذریعہ ای میل