اشاعتیں

2017 سے پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

تدبر القرآن ۔۔۔۔ سورۃ الکوثر از نعمان علی خان

تصویر
تدبر القرآن سورۃ الکوثر از استاد نعمان علی خان حصہ اول
روایت میں آتا ہے کہ ایک مرتبہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے سر اٹھایا اور مسکرانے لگے اور فرمایا :
"میرے پاس بالکل ابھی ایک سورہ آئی ہے"، اور عام طور پر جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس قرآن آتا تو آپ اسے لینے کے بعد اسکی تلاوت فرما دیتے اور بہت کم موقعوں پر پہلے اعلان فرمایا کہ میرے پاس (خاص) وحی آئی ہے۔ ویسے تو ہمارے لیے سارا قرآن ہی خاص ہے مگر قرآن کے اندر بھی چند لمحات ایسے ہیں جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم یہ چاہتے تھے کہ امت سمجھے کہ یہ ان میں خاص اہمیت ہے۔ کیونکہ اگر رسول االلہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ویسے بھی تلاوت فرماتےتو ہم اسے سنجیدگی سے ہی لیتے کیونکہ یہ اللہ کا کلام ہے مگر جب وہ عام طریقے سے ہٹ کر کہتے ہیں کہ "کیا تمہیں احساس ہے کہ ابھی ایک سورہ نازل ہوئی ہے" اسکی تلاوت سے بھی پہلے۔ تو اس میں کچھ خاص ہوتا تھا۔

روایات میں آپ صلی اللہ وآلہ وسلم کی مسکراہٹ کا بھی ذکر آتا ہے (آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اس وقت مسکرا رہےتھے ۔)سو یہ قرآن اور سنت کے درمیان ایک رشتے کا حصہ ہے کہ یہ سو…

سرکار کی گلی میں ۔۔۔

تصویر
اِک روز ہو گا جانا سرکار کی گلی میں ہو گا وہیں ٹھِکانہ سرکار کی گلی میں . گو پاس کچھ نہیں ہے لیکن یہ دیکھ لے گا اِک دِن مجھے زمانہ سرکار کی گلی میں . آنکھیں تو دیکھنے کو پہلے ہی مضطرِب تھیں دِل بھی ہوا روانہ سرکار  کی گلی میں . کبھی ہو حسیں تصور کبھی خود میں جاؤں چل کر رہے یوں ہی آنا جانا سرکار کی گلی میں . دِل میں نبی کی یادیں لَب پر نبی کی نعتیں جانا تو ایسے جانا سرکار کی گلی میں

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر ۔۔۔ حصہ-6

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ
تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل حصہ-6 مسجدالحرام اگلے دن جمعہ تھا۔ لوگوں نے بتایا تھا کہ جمعہ کے دن مسجدالحرام میں جگہ مشکل سے ملتی ہے۔ چنانچہ میں صبح دس بجے ہی مسجد پہنچ گیا۔ ایک ایسی جگہ منتخب کی جہاں سے کعبہ بالکل سامنے تھا۔ وہاں مسجدالحرام کے درو دیوار کا بغور جائزہ لینے لگا۔ مسجد کی چھت، دیواریں، فانوس اور بلندو بالا ستون آرٹ کا بہترین نمونہ تھے۔مسجدا لحرام کا موجودہ رقبہ ۸۸ ایکڑ سے زائد ہے۔میرے سامنے بیت اللہ تھا۔ اسے دیکھ کر مجھے اس کی تاریخ یاد آنے لگی۔ مکہ کا پرانا نام بکہ ہے۔ خانہء کعبہ وہ پہلا گھر ہے جسے اللہ نے عبادت کے لئے خاص کیا۔ اس کی تاریخ کی ابتدا حضرت ابراہیم علیہ السلام نے حضرت حاجرہ اور حضرت اسمٰعیل علیہما لسلام کو اس وادی میں بسا کر کی۔ بعد میں حضرت ابراہیم اور حضرت اسمٰعیل علیہما السلام نے اللہ کے حکم سےکعبہ کی تعمیرِنو کی۔ ایک تحقیق کے مطابق یہودیوں کا بھی یہی قبلہ تھا اور بیت المقدس کا رخ کعبہ کی طرف ہی تھا۔ بعد میں یہودیوں نے تحریف کرکے کعبے کا ذکر ہی بائبل سے غائب کردیا۔ اگر پیغمب…

جگنو بچے

تصویر
بشکریہ: عمر الیاس
“جگنو بچے” (بچوں اور بڑوں کے نام)
یہ شمعیں چھوٹی چھوٹی سی کل ممکن ہے خورشید بنیں کل ممکن ہے اے اہلِ چمن بے درد اندھیرے مِٹ جائیں کل ممکن ہے اے اہلِ چمن ظالم نہ رہے ظلمت نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن ہر جان فروزاں ہو جائے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن رہبر نہ رہے رہزن نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن یاں رزق میں سب کا حصہ ہو کل ممکن ہے اے اہلِ چمن سائل نہ رہے صاحب نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن کھلیان برابر بٹ جائیں کل ممکن ہے اے اہلِ چمن آقا نہ رہے بندہ نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن کمزور کی خدمت پہلے ہو کل ممکن ہے اے اہلِ چمن عہدہ نہ رہے رتبہ نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن سب علم کے طالب ہو جائیں کل ممکن ہے اے اہلِ چمن عالم نہ رہے جاہل نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن قانون محافظ ہو سب کا کل ممکن ہے اے اہلِ چمن بیکَس نہ رہے بے بس نہ رہے کل ممکن ہے اے اہلِ چمن تحقیق ہمارا شیوہ ہو کل ممکن ہے اے اہلِ چمن یاں صید نہ ہو صیاد نہ ہو کل ممکن ہے اے اہلِ چمن احساس کے قیدی ہوں ہم سب کل ممکن ہے اے اہلِ چمن آزاد جو ہو آزاد نہ ہو ہاں ممکن ہے اے اہلِ چمن یہ سن رکھّو اور جان رکھو  ان چھوٹی چھوٹی …

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر ۔۔۔ حصہ- 5

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ
تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل حصہ-5
شیطانی مشن عمرے کی ادائیگی کے بعد میں ہوٹل پہنچا۔ تھکن کافی ہوچکی تھی جس کی بنا پر نیند آجانا چاہئے تھی۔ لیکن نئی جگہ کے باعث نیند نہیں آرہی تھی۔ چنانچہ میری سوتی جاگتی آنکھوں میں وہی منظر آنے لگا جب شیطان نے چیلنج دیا تھا کہ میں انسان کے دائیں ، بائیں ، آگے اور پیچھے غرض ہر جگہ سے آؤں گا اور اسے جنت کے راستے سے بھٹکا کر جہنم کے دہا نے تک لے جاؤں گا۔ میں نے غور کیا تو علم ہوا کہ شیطان نے بڑی عیاری سے انسان کے گرد اپنے فریب کا جال بنا اور اکثریت کو راہ راست سے دور لے جانے میں کامیاب ہوگیا۔
اس نے پہلا وار تو حضرت آدم و حوا علیہما السلام پر کیا اور انہیں جنت سے نکلوانے میں کامیاب ہوگیا۔ دوسری کاری ضرب حضرت آدم کے بیٹے قابیل پر لگائی اور اسے حسد اور مادہ پرستی کی راہ پر ڈال کر اپنے ہی بھائی کے قتل پر مجبور کردیا۔ اس کے بعد اس نے انسان کا پیچھا نہ چھوڑا اور تواتر سے اپنی سازشوں کا دائرہ وسیع کرتا گیا۔ قوم نوح کو شرک کی گمراہیوں میں اس طرح الجھایا کہ وہ مرتے مر گئے لیکن خدا کی تو…

آج کی بات ۔۔۔ 11 اگست 2017

تصویر
~!~ آج کی بات ~!~
دین میں آسانی ہے مگر دین میں من مانی نہیں۔۔۔

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر ۔۔۔ حصہ- 4

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ
تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل حصہ-4
طواف میں لڑکھڑاتے ہوئے قدموں سے مطا ف میں داخل ہوا۔ وہاں خلاف توقع رش کم تھا۔ کچھ دور چلنے کے بعد سبزلائٹ کی سیدھ میں آگیا۔ اب حجر اسود میرے بائیں جانب تھا۔ یہاں حجر اسود کو استلام کیا یعنی اس کی جانب ہاتھ کا اشارہ کیا۔ یہ درحقیقت اپنا ہاتھ خدا کے ہاتھ میں دینے کی تعبیر تھی۔ یہ اللہ سے بیعت اور عہد کرنے کا انداز تھا، یہ تجدید عہد کا اظہار تھا۔ یہ اپنی خواہشات، رغبات، شہوات، مفادات اور تعصبات کو خدا کی رضا اور اس کے حکم پر قربان کرنے کا وعدہ تھا۔
طواف کی حقیقت یہ ہے کہ قدیم زمانےسے روایت تھی کہ قربانی کے جانور کو معبد ( عبادت گاہ) کے گرد پھیرے دلوائے جاتے تھے جس سے معبد کی عظمت اظہاراور قربانی کے ثمرات کا  حصول مقصود ہو تا تھا ۔ طواف اسی روایت کا علامتی اظہار ہے۔
میں نے طواف کا آغاز کیا۔ اس دوران مقام ابراہیم کو قریب سے دیکھا اور کعبہ کا بغور مشاہدہ کیا۔ ان سات چکروں میں کوئی مخصوص دعا نہیں، کوئی بھی دعا مانگ سکتے اور کسی بھی زبان میں مانگ سکتے ہیں ۔ لیکن میں نے کچھ لوگوں کو…

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر۔۔۔ حصہ- 3

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل
حصہ-3
جدہ ائیرپورٹ بالآخر جدہ ائیر پورٹ آگیا۔ اس وقت وہاں فجر کی نماز کا وقت ہورہا تھا۔ چنانچہ لاؤنج ہی میں فجر ادا کی۔ وہاں فلو کی ویکسی نیشن بھی ہوئی۔ امیگریشن کے مراحل ڈیڑھ گھنٹے ہی میں طے ہوگئے پھر کچھ دیر بعد ہی ہمیں پاکستان کے کیمپ میں بٹھا دیا گیا جہاں سے مکہ روانگی تھی۔ اس دوران پہلی مرتبہ سعودی باشندوں کو دیکھا ۔ ابتدا میں ا نکی باڈی لینگویج خاصی جارحانہ لگی لیکن بعد میں احساس ہوا کہ میرا یہ احساس غلط تھا اور یہ ان کا فطری انداز تھا۔ موجودہ سعودی عرب کی بنیاد عبدالعزیز بن سعود نے سن ۱۹۳۲ عیسوی میں رکھی۔ اس کی ابتدا سن ۱۷۴۷ میں ہوچکی تھی جب محمد بن سعود نے ایک اسلامی اسکالر عبدالوہاب کے ساتھ اشتراک قائم کیا۔ابتدا میں سعودی عرب ایک غریب ملک تھا لیکن ۱۹۳۸ میں تیل کے ذخائر دریافت ہونے کے بعد اس ملک کی قسمت بدل گئی۔ آج سعودی عرب کا شمار امیر ملکوں کی فہرست میں ہوتا ہے۔ یہاں کا سیاسی نظام بادشاہت پر قائم ہے اور کسی بھی قسم کی سیاسی سرگرمی کی یہاں کوئی اجازت نہیں۔
مکہ روانگی تقر…

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر ۔۔۔ حصہ-2

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر
حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل
حصہ- 2
لبیک ہماری فلائٹ رات ایک بج کر بیس منٹ پر تھی۔ میں نے لاؤنج میں اردگرد نگاہ ڈالی تو سب ہی مرد حضرات سفید احرام میں ملبوس تھے اور یہ منظر انتہائی دلفریب لگ رہا تھا۔ کچھ لوگوں نے عمرے کی نیت کرلی تھی ۔تقریباً رات کے ایک بجے ہم جہاز میں سوار ہوئے۔ رن وے پر اس وقت تاریکی کاراج تھا لیکن فضا ساکت اور خوشگوار تھی۔ جہاز تقریباً آدھے گھنٹے لیٹ تھا۔میری بائیں جانب ایک بزرگ بیٹھے تھے جبکہ دائیں جانب میں نے اپنی بیوی کو بٹھا یا تھا۔ جہاز نے ہولے ہولے سرکنا شروع کیا اور میں نےبھی تلبیہ پڑھ عمرے کی نیت کرلی۔ طیارے کی فضا میں لبیک کی صدائیں بلند ہونے لگیں ۔
لبیک اللہم لبیک، لبیک لاشریک لک لبیک، ان الحمد والنعمۃ لک والملک لاشریک لک۔ یہ تلبیہ پڑھتے ہی اپنے رب کے بلاوے پر بندہ اپنے مال و اسباب کو چھوڑ کر نکل کھڑا ہوا ہے۔ وہ کہہ رہا ہے : اے رب میں حاضر ہوں ، حاضر ہوں کہ تیرا کوئی شریک نہیں، تعریف تیرے ہی لئے، نعمت تیری ہی ہے اور تیری ہی بادشاہی ہے جس میں تیرا کوئی شریک نہیں۔
یہ ترانہ پڑھتے ہوئ…

آج کی بات ۔۔۔ 05 اگست 2017

تصویر
~!~ آج کی بات ~!~
بولنا سب کو آتا ہے  بس کسی کا دماغ بولتا ہے  کسی کا اخلاق بولتا ہے اور کسی کی زبان ..

آخرت کے مقابلے میں دنیا کی قیمت - اقتباس خطبہ جمعہ مسجد نبوی

تصویر
آخرت کے مقابلے میں دنیا کی قیمت - خطبہ جمعہ مسجد نبوی ترجمہ: شفقت الرحمان مغل
فضیلۃ الشیخ ڈاکٹر جسٹس صلاح بن محمد البدیر حفظہ اللہ نے 12-ذو القعدہ- 1438 کا مسجد نبوی میں خطبہ جمعہ بعنوان "آخرت کے مقابلے میں دنیا کی قیمت" ارشاد فرمایا، جس میں انہوں نے فرمایا کہ دنیا کی زندگی فانی اور آخرت کی زندگی دائمی ہے اس لیے دنیا کے مقابلے میں آخرت کو ترجیح دینا ہی عقلمندی ہے؛ کیونکہ دنیا آخرت کے مقابلے میں سمندر کے ایک قطرے کے برابر ہے، نیز انسان جتنی بھی دنیا کما لے انسان اسے اپنے ساتھ نہیں لے کر جاتا بلکہ وہ یہی رہ جاتی ہے، اس لیے انسان کو چاہئیے کہ اپنی زندگی کی قدر کرے اور اس میں آخرت کے لیے زادِ راہ بنا لے۔
خطبے کا منتخب اقتباس درج ذیل ہے:
تمام تعریفیں اللہ کے لیے ہیں، ان تعریفوں پر میں معاوضے کا خواہاں نہیں ، میں اسی کی ثنا خوانی کرتا ہوں کیونکہ اسی نے گمراہی اور تباہی سے ہمیں تحفظ عنایت فرمایا، ہماری رہنمائی کے ساتھ ہمیں ہدایت یافتہ اعمال کیلیے توفیق بھی دی، میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی حقیقی معبود نہیں وہ یکتا ہے اس کا کوئی شریک نہیں ، اس کی شریک حیات یا اولاد کچھ بھی ن…

آج کی بات ۔۔۔ 04 اگست 2017

تصویر
~!~ آج کی بات ~!~
انسان کے لیے زندگی کا کامیاب فارمولا صرف ایک ہے،  اور وه یہ ہے..... آخرت کے لیے غم، اور دنیا کے لیے بے غم.  یہی انسان کے تمام معاملات کا خلاصہ ہے.  یہی واحد طریق زندگی ہے جس میں انسان اپنے لیے سکون پا سکتا ہے 
مولانا وحید الدین خان

ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر ۔۔۔ حصہ-1

تصویر
ابلیس سے جنگ کی روداد۔ ۔۔ حج کا سفر
حج کی داستان حج کی اصل روح کے تعارف کے ساتھ تحریر: پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل
حصہ-1
پس منظر رات اپنے اختتام کے آخری مراحل میں تھی اور سورج طلوع ہونے کے لئے پر تول رہا تھا۔ فلائٹ آنے میں ابھی وقت تھا ۔اس اجالے اور تاریکی کے ملاپ نے ائیرپورٹ کے مادیت سے بھرپور ماحول میں بھی روحانیت کا احساس پیدا کردیا تھا۔یہ مئی ۲۰۰۹ کا واقعہ ہے جب میں ائیر پورٹ پر اپنے والدین ، بھائی اور دادی کو رسیو کرنے آیا تھا جو عمرہ ادا کرکے واپس آرہے تھے۔ فجر کا وقت ہوگیا تھا چنانچہ میں نے نماز فجر مسجد میں ادا کی۔ نماز کے بعد جب فلائٹ آگئی تو میرے والدین باہر آگئے۔ میں نے جب اپنے بھائی اور والد کے منڈےہوئے سر دیکھے تو طبیعت میں ایک عجیب سا اضطراب پیدا ہونے لگا۔ میرا دل چاہا کہ میں بھی اپنا سر منڈوا کر خود کو اللہ کی غلامی میں دے دوں، میں بھی سفید احرام میں ملبوس ہوکر اس کی بارگاہ میں حاضری دوں، میں بھی اس کے در پرجاکر لبیک کا ترانہ پڑھوں۔ یہ احساس زندگی میں پہلی مرتبہ مجھے ہوا جو ایک خوشگوار حیرت کا باعث تھا۔مجھے یوں محسوس ہو ا کہ شاید حرم سے بلاوے کا وقت آگیا ہے۔ اس کے بعد میں نے اپ…

وطن میرا حوالہ ہے

تصویر
وطن میرا حوالہ ہے شاعر: نامعلوم
محبت اور کہانی میں کوئی رشتہ نہیں ہوتا
مگر میری محبت تو
کہانی ہی کہانی ہے
کوئی راجہ نہ رانی ہے
محبت کی کہانی تو
مسافت ہی مسافت ہے
ضرورت کی مسافت میں
مسافر واپسی کے سارے امکان پاس رکھتا ہے
محبت کی مسافت میں
مسافر کے پلٹتے کا کوئی رستہ نہیں ہوتا
وہ ساری کشتیاں اپنی
جلا دیتے ہیں ساحل پر
کے نا - امید ہونے پر
پلٹنا بھی اگر چاہیں
تو واپس جا نہیں پائیں
وہیں غرقاب ہو جائیں
محبت کی کہانی میں مسافت کی بشارت تھی
مسافت طے ہوئی تو پھر
جلا ڈالی تھیں میں نے بھی
وہیں سب کشتیاں اپنی
جہاں پہلا پڑاؤ تھا
شکستہ جسم تھا میرا
میرے سینے میں گھاؤ تھا
بھڑکتا اک الاؤ تھا
کسی کی چاہ میں سب کچھ لٹا کے
آ گیا تھا میں
کہاں پر آ گیا تھا میں؟
جہاں پہچان کا اپنی
حوالہ ہی نہ ملتا تھا
حوداث کے تھپیڑوں سے
سنبھالا ہی نہ ملتا تھا
شب تیرہ سے نکلا تھا
اجالوں کی تمنا میں
مگر مجھ کو کسی جانب
اجالا ہی نہ ملتا تھا
مگر ہمت نہیں ہاری
یہاں تک ایسے ہوں میں
جہاں ہر سو اجالا ہے
میری پہچان ہے اپنی
وطن میرا حوالہ ہے
مجھے اس نے سنبھالا ہے
اسے میں نے سنبھالا ہے
یہی میرا حوالہ ہے
یہی میرا حوالہ ہے

لَبَّیْکَ اَللّٰھُمَّ لَبَّیْکَ

تصویر
بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
لَبَّیْکَ اَللّٰھُمَّ لَبَّیْکَ لَبَّیْکَ لَا شَرِیْکَ لَکَ لَبَّیْکَ اِنَّ الْحَمْدَ وَ النِّعْمَۃَ لَکَ وَ الْمُلْکَ لَا شَرِیْکَ لَک
ترجمہ :حاضر ہوں اے اﷲ میں حاضر ہوں میں حاضر ہوں تیرا کوئی شریک نہیں میں حاضر ہوں۔بے شک حمد تیرے ہی لائق ہے ساری نعمتیں تیری ہی دی ہوئی ہیں بادشاہی تیری ہی ہے اورتیرا کوئی شریک نہیں۔
ایک بار پھر حج کی آمد آمد ہے اور لبیک کا ترانہ پڑھتے خوش نصیب قافلے حج کی سعادت حاصل کرنے سوئے حرم جا رہے ہیں اور ساتھ میں یادوں کے دریچوں پر بھی دستک دے رہے ہیں، وہاں گزارے گئے ایام یاد دلا رہے ہیں۔ اللہ ان کی عبادات قبول فرمائے اور ہم سب کو بار بار اپنے در کی حاضری نصیب فرمائے آمین!!
موسمِ حج کی مناسبت سے اپنی اور بہت سے لوگوں کی یادوں کو تازہ کرنے اور جو ابھی تک اس سعادت سے محروم ہیں ان کے لیے بھی حج جیسی بڑی عبادت کا مقصد بیان کرتا ایک "سفر نامہ" یہاں شروع کرنا چاہوں گی، جو کہ "پروفیسر ڈاکٹر محمد عقیل" کا تحریر کردہ ہے۔ آپ اس کو "مکمل" بھی پڑھ سکتے ہیں، مگر میں یہاں اس کو چند اقساط میں پوسٹ کروں گی ان شاء اللہ۔ پہلا…

اپنے درد کا اشتہار نہ بنائیے

تصویر
 اپنے درد کا اشتہار نہ بنائیے جویریہ سعید
ہم واقعی نہیں جانتے کہ ہمیں خدا کی کن کن نعمتوں کا شکر ادا کرنا چاہیے. ہم بہت سی نعمتوں کو فور گرانٹڈ لیتے ہیں (ہلکا لیتے ہیں، احساس اور قدر نہیں کرتے) اور اس کا ایک اظہار یہ ہے کہ ہم دوسروں پر تنقید اور نصیحتیں کرنے میں بہت بےرحمانہ عجلت سے کام لیتے ہیں.
ایسی ہی نعمتوں میں سے ایک نعمت جذباتی استحکام (emotional stability) ہے. اگر آپ جذباتی طور پر مستحکم رہتے ہیں تو اس پر اللہ کا شکر بنتا ہے. بہت سے لوگ اس معاملے میں آزمائش سے گزر رہے ہوتے ہیں.
"جذباتی عدم استحکام" (emotional instability)  کی ایک شکل تو (Mood Swings) کا ہونا ہے. مراد اس سے یہ ہے کہ یا تو بہت خوش یا بہت اداس یا بہت چڑچڑا رہا جائے، اور آپ ایک پنڈولم کی طرح ان دو انتہاؤں کی طرف جھولتے رہیں. اس کی دوسری شکل یہ بھی ہو سکتی ہے کہ آپ کے جذبات کی شدت آپ کو پریشان رکھے، مثلا آپ غمگین رہتے ہوں اور خود کو اداسی کے سمندر میں ڈوبتا محسوس کرتے ہوں، کسی سے محبت کریں یا چاہیں تو طبیعت پر اختیار نہ رہے اور دل کا قرار کھو جائے، یا اندیشے اور شکوک آپ کو بےانتہا مضطرب رکھتے ہوں.
ایسا عارض…

آج کی بات ۔۔۔ 02 اگست 2017

تصویر
~!~ آج کی بات ~!~
خوشی کشید کیجیے ۔۔۔ بالکل عام سی لگنے والی چیزوں سے ۔۔۔ خوشی کا تعلق روپیہ پیسہ سے نہیں ہے اپنی سوچ کے زاویے سے ہے۔

عرش الہی کا تعارف اور مسجد اقصی کی حالت - خطبہ جمعہ مسجد نبوی

تصویر
عرش الہی کا تعارف اور مسجد اقصی کی حالت - خطبہ جمعہ مسجد نبوی ترجمہ: شفقت الرحمان مغل
فضیلۃ الشیخ ڈاکٹر جسٹس عبد المحسن بن محمد القاسم حفظہ اللہ نے05-ذوالقعدہ-1438 کا خطبہ جمعہ مسجد نبوی میں "عرشِ الہی کا تعارف اور مسجد اقصی کی حالت" کے عنوان پر ارشاد فرمایا، جس میں انہوں نے کہا کہ اللہ تعالی کی صفت خالق اللہ تعالی کے معبود حقیقی ہونے کی سب سے بڑی دلیل ہے اور اگر کسی چیز میں صفت خالق نہ ہو پھر بھی اس کی پرستش کی جائے تو یہ اس کے باطل ہونے کی علامت ہے۔
خطبے کا اقتباس درج ذیل ہے:
یقیناً تمام تعریفیں اللہ کے لیے ہیں، ہم اس کی تعریف بیان کرتے ہیں، اسی سے مدد کے طلب گار ہیں اور اپنے گناہوں کی بخشش بھی مانگتے ہیں، نفسانی اور بُرے اعمال کے شر سے اُسی کی پناہ چاہتے ہیں، جسے اللہ تعالی ہدایت عنایت کر دے اسے کوئی بھی گمراہ نہیں کر سکتا، اور جسے وہ گمراہ کر دے اس کا کوئی بھی رہنما نہیں بن سکتا، میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی معبودِ بر حق نہیں ، وہ تنہا ہے اس کا کوئی شریک نہیں، اور میں یہ بھی گواہی دیتا ہوں کہ محمد اللہ کے بندے اور اس کے رسول ہیں، اللہ تعالی آپ پر ، آپ کی آل ، ا…

زمرہ جات

غزلیں سورہ البقرہ اللہ امید دعا استقبال رمضان، سوئے حرم پاکستان میری شاعری میرے الفاظ سفرِ حج محبت خطبہ مسجد نبوی خلاصہ قرآن شاعری ایمان، صراط مستقیم یاد حرم اچھی بات، نعت رسول مقبول حمد باری تعالٰی شکر حج 2015 سفرنامہ #WhoIsMuhammad سورۃ الکہف ملی ترانے نمل حج 2017 سورہ الرحمٰن پیغامِ حدیث، استغفار توبہ توکل خوشی دوستی سورہ الکھف علامہ اقبال علم 9نومبر باغبانی حکمت کی باتیں سفر مدینہ قائد اعظم یوم دفاع آبِ حیات آزادی جنت خطبہ حجتہ الوداع رومی، سورۃ الناس شکریہ عید مبارک فارسی اشعار، قرآن کہانی لبیک اللھم لبیک محمد، سوشل میڈیا، معلومات نیا سال، 2017 پیغام اقبال یوم پاکستان 11-12-13 16December2014 APS اردو محاورہ جات بارش جنت کے پتے حج 2016 حیا، خطبہ مسجد الحرام ذرا مسکرائیے زیارات مکہ سورج گرہن 2015 سورہ العلق، سورہ الکوثر سورۃ العصر سورۃ الفاتحہ، طنز و مزاح عاطف سعید عورت قرآن لیس منا ماں محمد، مسدس حالی مصحف موسیقی نمرہ احمد والد یوم خواتین، عورت
اور دکھائیں

سبسکرائب بذریعہ ای میل