بدھ, فروری 27, 2013

Mohabbat Is Tarah


محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے پھول پہ تتلی اترتی ہے
ہوا میں ڈولتی، پر تولتی تتلی
لرزتی،  کپکپاتی، پنکھڑیوں کو پیار کرتی ہے
تو ہر پتۤی نکھرتی ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے چار سُو خوشبو بکھرتی ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے خواب آتا ہے
جو آتا ہے تو دروازے پہ دستک تک نہیں ہوتی
بہت سرشار لمحے کی، مدُھر چُپ میں
کسی ہلکورے لیتی آنکھ کی خاطر
کسی بے تاب سے ملنے، کوئی بے تاب آتا ہے
محبت اس طرح بھیجو
کہ جیسے جھیل میں مہتاب آتا ہے

 (سعود عثمانی)

~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise phool pe titli utarti hai
Hawa main dotli, par tolti titli
Larazti, kapkapati, pankhriyon ko piyar karti hai
To har patti nikharti hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise chaar soo khushboo bikharti hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise khwab ata hai
Jo aata hai to darwazey pe dastak tak nahi hoti
Bohar sarshar lamhey ki, madhur chup main
Kisi hilkorey leti aankh ki khatir
Kisi be-taab se milney, koi be-taab ata hai
Mohabbat is tarah bhejo
Ke jaise jheel main mehtaab ata hai

(Saud Usmani)

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں