پیر, اپریل 01, 2013

Zaat



انسان بعض دفعہ اپنی ذات کے بہت سے پہلوؤں سے اس وقت آگاہ ہوتا ہے جب دوسرے اسے دیکھ لیتے ہیں۔ ان کا اس سے واسطہ پڑ جاتا ہے وہ اس پر بات کرنے لگتے ہیں اور تب انسان جیسے شاک کے عالم میں اپنی ذات کے اس پہلو کو دیکھتا ہے۔ حیران ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میں کیسے کر سکتا ہوں؟ میں ایسا کس طرح کر سکتا ہوں؟ لیکن سارا مسلہ یہ ہوتا ہے کہ سوال بہت سارے ہوتے ہیں جواب نہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جواب بس ایک ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور وہ ڈھونڈنے سے بھی نہیں ملتا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

(عمیرہ احمد کے ناول “عکس” سے اقتباس)

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں