محبتوں میں سچے


منقول

محبت صرف اتنی ہی ہے جو رب کی عطا ہے
جتنی ہے ۔۔۔
جس کے لیے ہے۔۔۔۔
جس قدر ہے۔۔۔
اور جب تک ہے۔۔۔۔
اس کے بعد پھر وہی لوگ تضحیک کر کے چلتے نظر آتے ہیں جو اس سے قبل محبتوں کے دعوے دارہوتے ہیں
مشکل وقت میں محبتوں کے بھید کھل جاتے ہیں.
کون عزت کرتا ہے۔۔۔۔
کب تک کرتا ہے۔۔۔۔
کتنا مشکل میں ساتھ نبھاتا ہے۔۔۔۔
رب کی عطا اس کی تقسیم کے ساتھ ہے
جنہیں جدا ہونا ہوتا ہے وہ ساتھ چھوڑ دیتے ہیں 
جنہیں ساتھ دینا ہوتا حالات جیسے بھی ہوں ساتھ دیتے
ساتھ چلنے والے بہت سے لوگ مل جاتے ہیں
ساتھ ہو کر ساتھ دینے والے لوگ بھی رب کی عطا سے ہیں
اور اس سب کے باوجود کچھ محبتیں بے سبب ہوتی ہیں
جن سے کچھ درکار نہیں ہوتا
کچھ مفاد نہیں ہوتا
جنہیں ہم خوش دیکھنا چاہتے
اور دعا کو اٹھے ہاتھ بغیر کسی غرض و غایت کے ان کے لیے خیر اور خوشیاں مانگتے ہیں
اللہ کے لیے محبتیں رکھنے والے 
فقط اللہ کے لیے ملنے والے
اور فقط اللہ کے لیے جدا ہونے والے لوگ
یہی ہیں جو محبتوں میں سچے ہیں ...


تبصرے

زیادہ دیکھی گئی تحاریر

آٹھ مصیبتیں

ہم خوشحال زندگی کیسے گزار سکتے ہیں؟

دوستی ۔۔۔ میری ایک شعری کاوش

زمرہ جات

اور دکھائیں

سبسکرائب بذریعہ ای میل