ممتا (ایک احساس)

~!~ ممتا ~!~

تیرا میرا ازل کا ہے رشتہ
تیرے دم سے ہے دم رواں میرا
تیرے ہوتے ہوئے کبھی سر پر
میں نے دیکھا نہ درد کا سایا
تیری آغوش ہے پناہ مری
تیری ممتا ہے آسرا میرا
تُو سلامت تو میں سلامت ہوں
تیرے ہونے سے ہے مرا ہونا

شاعرہ: ناز بٹ

تبصرے

زیادہ دیکھی گئی تحاریر

ماہ رمضان نیکیوں کی بہار – مقتبس خطبہ جمعہ مسجد نبوی

خوش ترین زندگى، زندگى با قناعت است

استقبالِ رمضان-22

شکر ہے تیرا خدایا

زمرہ جات

اور دکھائیں

سبسکرائب بذریعہ ای میل