منگل, جون 18, 2013

Kahani aazmati hai

کہانی آزماتی ہے
کہانی نت نئے انداز رکھتی ہے
کھبی تو مسکراتی ہے کبھی یہ گنگناتی ہے
کبھی خود سہم جاتی ہے ، کبھی ہم کو ڈراتی ہے
ہنساتی ہے، رلاتی ہے ، مٹاتی ہے،بناتی ہے
کہانی بے کلی میں کام آتی ہے
کہانی سے مرا سنجوگ خاصا ہی پرانا ہے
کہانی خود زمانہ ہے

فاخرہ بتول

~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Kahani aazmati hai
Kahani nit naye andaz akhti hain
Kabhi to muskurati hain, kabhi yeh gungunati hai
Kabhi khud sehem jati hai, kabhi ham ko darati hain
Hansati hain, rulati hain, mitati hain, banati hain
Kahani be-kali main kaam aati hain
Kahani se mera sanjog khasa hi purana hai
Kahani khud zamana hai

Fakhira Batool

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں