بدھ, فروری 29, 2012

Tere Mere Darmiyan


تیرے میرے درمیاں ہے، یہ جو فاصلہ سا، کیوں ہے
دل و جان کا اذیت سے یوں رابطہ سا کیوں ہے

کیوں ہے دل اداس میرا۔ کیوں ہے وحشتوں کا پہرا
تیرے غم کا بنتا مٹتا یہاں دائرہ سا کیوں ہے

کیوں ہے جان جاںکنی میں، کیوں ہے روح بے بسی میں؟
کہ جنوں کی منزلوں سے میرا واسطہ سا کیوں ہے

کیوں ہے اضطراب مجھ میں کیوں ہے وحشتوں کا عالم
میری دسترس میں ہو کے بھی وہ بھاگتا سا کیوں ہے

وہ جو پاس ہوکے بھی ہے، وہ جو دور مجھ سے اتنا
ہے شگفتہؔ دل وہ میرا، وہی اک جدا سا کیوں ہے

شگفتہ سبحانی         
~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~

Tere mere Darmiٓyaan hai..ye jo fasla sa kyun hai?
Dil o Jaan ka Azeeyat se Yun raabta sa kyun hai?

  kyun hai Dil Udaas Mera kyun hai Wahshaton ka pahra?
tere Gham ka banta mit'ta yahan dayera sa kyun hai?

Kyun hai Jan jan-kuni me kyun hai Rooh be-basi me?
Ke Junoon ki manzilon se mera Waa.sta sa kyun hai?

Kyun hai Izteraab mujh me kyun hai wahshaton ka aalam..
Meri Dastaras me ho k bhi wo Bhagta sa kyun hai?

Wo jo pass ho ke bhi hai ,wo jo door mujh se itna
hai SHAGUFTA dil wo mera ..wohi ek Judaa sa kyunhai??

Shagufta Subhani 

 

0 comments:

ایک تبصرہ شائع کریں